Ultimate magazine theme for WordPress.

50 Best Attitude Poetry in Urdu: 2 Lines Attitude Poetry

0 25

- Advertisement -

50 Best Attitude Poetry in Urdu: 2 Lines Attitude Poetry.

دہشت پھیلانی ہے توشیر کی طرح پھیلاو
ڈرانا تو کتے بھی جانتے ہیں

Dehshat phalane hai توشیر ki terhan philav
Darana to kuttay bhi jantay hain

توں کَلاّ ای نئی سڑدا
بڑی دنیا سڑدی اے ساڈے توں

Too Kalla e nai Sarrda
Barri duniya sarrdi ae saade ton

زندگی کو اتنا سستا بھی مت بناو
کہ دو کوڑی کے لوگ کھیل کر چلے جائیں

Zindagi ko itna sasta bhi mat banao
Ke do kori ke log khail kar chalay jayen

وہ درد بھی تکلیف میں آجاتے ہیں
جو ہم سے مخاطب ہوتے ہیں

Woh dard bhi takleef mein aa jatay hain
Jo hum se mukhatib hotay hain

فرض کرو، اگر فرصت میں تم کو مل جاؤں
تو حیرت میں پڑ جاؤ گے یا سینے سے لگ جاؤ گے

Farz karo, agar fursat mein tum ko mil jaoon
To herat mein par jao ge ya seenay se lag jao ge

میں باتوں سے ذات جان جاتی ہوں
اور حرکتوں سے اوقات

Mein baton se zaat jaan jati hon
Aur harkato se auqaat

بھولے نہیں اسے اور بھلائيں گے بھی نہیں
بس نظر انداز کریں گے اسے اسی کی طرح

Bhoolay nahi usay aur bhulaayen ge bhi nahi
Bas nazar andaaz karen ge usay isi ki terhan

خون میں وہ اُبال آج بھی خاندانی ہے
دنیا ہمارے شوق کی نہیں تیور کی دیوانی ہے

Khoon mein woh ubaal aaj bhi khandani hai
Duniya hamaray shoq ki nahi tevare ki dewaani hai

احسان یہ رہا تہمت لگانے والوں کا مجھ پر
اُٹھتی اُنگلیوں نے مجھے مشہور کردیا

Ahsaan yeh raha tohmat laganay walon ka mujh par
Uthtee aُnglyon ne mujhe mashhoor kardiya

Attitude Poetry in Urdu

میں اپنے دشمنوں کو بھولتی نہیں
بس وقت آنے پہ دیکھتی ہوں

Mein apne dushmanon ko bhulte nahi
Bas waqt anay pay dekhatii hon

لوگوں سے کیا شکایت
ہم تو خود کو زہر لگتے ہیں

Logon se kya shikayat
Hum to khud ko zeher lagtay hain

میں ایٹی چوڈ میں رہتی ہوں
تبھی لوگ اوقات میں رہتے ہیں

Mein rehti hon attitude mein
Tabhi log auqaat mein rehtay hain

وقت کے ایک طماچے کی دیر ہےصاحب
میری فقیری کیا، تیری بادشاہی کیا؟

Waqt ke aik tamaache ki der hai sahib
Meri faqeeri kya, teri badshahi kya ?

پرکشش انداز ہے ہمارا صاحب
سادگی میں بھی بادشاہ لگتے ہیں

Purkashish andaaz hai hamara sahib
Saadgi mein bhi badshah lagtay hain

دنیا میں صرف 2 چیزیں ہی مشہور ہیں
محبوب کی سمائل اور میرا سٹائل

Duniya mein sirf 2 cheeze hi mashhoor hain
Mehboob ki smile aur mera stayl

ہرا کر اگر کوئی جان بھی لے لے تو منظور ہے
دھوکا دینے والوں کو میں پھر موقع نہیں دیتا

Hara kar agar koi jaan bhi le le to Manzoor hai
Dhoka dainay walon ko mein phir mauqa nahi deta

اس دنیا میں دو ہی چیزوں کی ویلیو ہے
ایک زمینوں کی دوسری میرے جیسے کمینوں کی

Is duniya mein do hi cheezon ki value hai
Aik zamiinon ki doosri mere jaisay kaminiye ki

جینا ہے تو ایسے جیو کے زمانہ احترام کرے
اور جب مرو تو دشمن بھی قبر کو سلام کرے

Jeena hai to aisay geo ke zamana ehtram kere
Aur jab mrw to dushman bhi qabar ko salam kere

Attitude Poetry in Urdu

مجھے نفرت پسند ہے
لیکن دکھاوے کا پیار نہیں

Mujhe nafrat pasand hai
Lekin dikhavay ka pyar nahi

سادہ مزاج ہوں، مجھے سادگی پسند ہے
تخلیق خدا ہوں، مجھے عاجزی پسند ہے

Saada mizaaj hon, mujhe saadgi pasand hai
Takhleeq kkhuda hon, mujhe aajzi pasand hai

وہ میرے خوابوں پر ہنستے تھے
اب میں ان کے لائف اسٹائل پر ہنستا ہوں

Woh mere khowaboon par hanstay thay
Ab mein un ke life style par hanstaa hon

ہماری پرسنلٹی، ہماری ایک ادا
تو کیا تیری سہیلی بھی ہم پر فدا

Hamari personality, hamari aik ada
To kya teri saheli bhi hum par fida

ششس! بھونکنا انسانوں کا نہیں
کتوں کا کام ہے

Shashhh! bhonkna insanon ka nahi
Kutton ka kaam hai

کام ایسا کرو کہ نام ہو جائے
ورنہ نام ایسا کرو کہ نام لیتے ہی کام ہو جائے

Kaam aisa karo ke naam ho jaye
Warna naam aisa karo ke naam letay hi kaam ho jaye

دن اور رات لوگوں کے ہوتے ہیں
شیروں کا زمانہ ہوتا ہے

Din aur raat logon ke hotay hain
Sheron ka zamana hota hai

نہ سر پہ تاج ہے
اور نہ یہ سرکسی تاج کا محتاج ہے

Nah sir pay taaj hai
Aur nah yeh sarkasi taaj ka mohtaaj hai

اس نے پوچھا آپ کی تعریف ؟
میں نے کہا جتنی کرو اتنی کم ہے

Is ne poocha aap ki tareef ?
Mein ne kaha jitni karo itni kam hai

Attitude Poetry in Urdu

اوقات نہیں دشمن کی آنکھ سے آنکھ ملانے کی
اور بات کرتے ہیں ہمیں مٹانے کی

Auqaat nahi dushman ki aankh se aankh milaane ki
Aur baat karte hain hamein mitanay ki

تاج محل ہمارے لیے بیکار ہے
کیونکہ روز بدلتی ہماری ممتاز ہے

Taaj mehal hamaray liye bekar hai
Kyun kay roz badalti hamari mumtaz hai

خاموش رہنا فقط عادت ہے میری
ویسے سر پھرا، پاگل، آوارہ، مشہور ہوں میں

Khamosh rehna faqat aadat hai meri
Waisay sir phira, pagal, aawara, mashhoor hon mein

وقت لگے گا سنبھل جاوں گا
ٹھوکر سے گرا ہوں اپنی نظروں سے نہیں

Waqt lagey ga sambhal jaun ga
Thokar se gira hon apni nazron se nahi

میری کسی سے بنتی نہیں
اس میں میری کوئی غلطی نہیں

Meri kisi se banti nahi
Is mein meri koi ghalti nahi

جب تک آپ سے کوئی جلنے والا نہ ہو
زندگی میں مزہ نہیں آتا

Jab tak aap se koi julne wala nah ho
Zindagi mein maza nahi aata

جو مزا” سین “کر کے اگنورکرنے میں ہے
وہ بلاک کرنے میں نہیں

Jo maza seen kar ke ignore karne me hai

Woh bock karne mein nahi

نفرت ہی تو کر سکتے ہو
اور تم میرا کر بھی کیا سکتے ہو

Nafrat hi to kar satke ho
Aur tum mera kar bhi kya satke ho

دشمن اور سیگرٹ کو جلانے کے بعد
کچلنے کا مزا ہی کچھ اور ہے

Dushman aur ciggarette ko jalanay ke baad
Kuchalnay ka maza hi kuch aur hai

دم آوازمیں نہیں
الفاظ میں ہونا چاہیے

Dam awaz me nahi
Alfaaz mein hona chahiye

ہم مشہور کیا ہوئے
ساری دنیا پریشان ہو گئی

Hum mashhoor kya hue
Saari duniya pareshan ho gayi

دنیا ہمارے فیشن کی نہیں
ہمارے تیور کی دیوانی ہے

Duniya hamaray fashion ki nahi
Hamaray tevare ki dewaani hai

کسی کے پاس ایگو ہے تو کسی کے پاس ایٹی چوڈ ہے

ہمارے پاس تو ایک دل ہے اور وہ بڑا کیوٹ ہے

Hai attitude kisi ke paas ego kisi ke paas
Hamaray paas to aik dil hai aur woh bara cute hai

ابھی بھی دنیا میں ایک مضبوط رشتہ بچا ہے
اور وہ ہے میرا اور میرے فون کا

Abhi bhi duniya mein aik mazboot rishta bacha hai
Aur woh hai mera aur mere phone ka

روک ٹوک مجھے پسند نہیں
میں اپنی مرضی کا مالک ہوں

Rok tok mujhe pasand nahi
Mein apni marzi ka maalik hon

ضد پہ آوں تو سانسیں بھی ٹھکرا دوں
تو میری جان کس گمان میں ہے

Zid pay aaon to sansen bhi thukra dun
To meri jaan kis gumaan mein hai

عادت نہیں پیٹھ پیچھے وار کرنے کی
دو لفظ کم بولتا ہوں پر سامنے بولتا ہوں

Aadat nahi peeth peechay waar karne ki
Do lafz kam boltaa hon par samnay boltaa hon

تیرے لیے ہوگی لاکھوں کی اکڑ تیری
ہمیں تو دو روپے کی بھی نہیں لگتی

Tairay liye hogi lakhoon ki akarr teri
Hamein to do rupay ki bhi nahi lagti

سوچ برانڈڈ ہونی چاہیے
کپڑے نہیں !

Soch branded honi chahiye
Kapray nahi!

Read More:

Leave A Reply

Your email address will not be published.