Ultimate magazine theme for WordPress.

پنڈورا پیپرز: ترین اور مونس سمیت 700 سے زائد پاکستانیوں کے نام شامل

مصطفےٰ صفدر بیگ

41

اسلام آباد: پنڈورا پیپرز، دنیا بھر کے اعلیٰ شخصیات کے مالیاتی رازوں سے پردہ اٹھانے والی تحقیقات میں 700 سے زائد پاکستانیوں کے نام شامل ہیں ، یہ نام اتوار کو آئی سی آئی جے کی تحقیقات میں سامنے آئے۔

کچھ ریٹائرڈ فوجی افسران ، کاروباری افراد اور میڈیا کمپنی کے مالکان کا بھی نام لیکس میں شامل ہے۔

واضح رہے کہ اگر کسی آف شور کمپنی کو قانون کے مطابق قرار دیا گیا ہو اور وہ کمپنی کسی غیر قانونی کام کے لیے استعمال نہ ہو تو آف شور کمپنی بنانا بذات خود کوئی غیر قانونی کام نہیں ہے۔

پنڈورا پیپرز میں شامل سیاستدانوں کے نام

  • پنڈورا پیپرز میں وزیر خزانہ شوکت ترین ، وزیر آبی وسائل مونس الٰہی ، سینیٹر فیصل واوڈا ، اسحاق ڈار کے بیٹے  کے نام شامل ہیں۔
  • اِن پنڈورا پیپرز میں پیپلز پارٹی کے شرجیل میمن ، وزیر صنعت و پیداوار خسرو بختیار کے خاندان ، پی ٹی آئی رہنما عبدالعلیم خان سمیت دیگر شامل ہیں۔
  • پنڈورا پیپرز میں پیپلز پارٹی کے شرجیل میمن کی آف شور کمپنی بھی شامل ہے۔
  • وفاقی وزیر صنعت خسرو بختیار کے خاندان کی آف شور کمپنی بھی پنڈورا پیپرز میں شائع ہوئی ہے۔
  • وزیراعظم کے سابق معاون خصوصی وقار مسعود کے بیٹے کی آف شور کمپنی بھی سامنے آگئی۔
  • ایگزیکٹو مالک شعیب شیخ کی آف شور کمپنی بھی پانڈورا پیپرز میں شامل ہے۔

پنڈورا پیپرز میں کچھ ریٹائرڈ فوجی افسران ، کچھ بینکرز ، تاجر اور کچھ میڈیا مالکان کی آف شور کمپنیاں بھی شامل ہیں۔

پنڈورا پیپرز میں شامل ریٹائرڈ فوجی افسران کے نام:

پنڈورا پیپرز میں کئی سابق فوجی افسران کے نام بھی سامنے آئے ہیں۔ ایک آف شور کمپنی کا نام سابق صدر پرویز مشرف کے سابق ملٹری سیکرٹری لیفٹیننٹ جنرل (ر) شفاعت اللہ شاہ کے نام پر بھی رکھا گیا ہے۔

  • انہوں نے لندن میں ایک آف شور کمپنی کے ذریعے ایک مہنگا اپارٹمنٹ خریدا ہے۔
  • آئی ایس آئی کے سابق ڈائریکٹر جنرل برائے انسداد دہشت گردی میجر جنرل (ر) نصرت نسیم کے نام پر ایک آف شور کمپنی بھی سامنے آئی ہے۔
  • میجر جنرل (ر) نصرت نسیم نے اپنی ریٹائرمنٹ کے فورا بعد 2009 میں ایک آف شور کمپنی رجسٹر کی۔
  • ایک آف شور کمپنی کا نام بھی لیفٹیننٹ جنرل (ر) افضل مظفر کے نام پر رکھا گیا ہے۔
  • افضل مظفر کے خلاف اسٹاک مارکیٹ میں 4.3 ارب روپے کی سرمایہ کاری کا مقدمہ بھی چلایا گیا۔
  • لیفٹیننٹ جنرل (ر) علی قلی خان کی بہن نے ایک آف شور کمپنی کے ذریعے برطانیہ میں جائیدادیں خریدیں۔
  • ایک آف شور کمپنی کا نام بھی سابق ائیر چیف مارشل عباس خٹک کے دو بیٹوں کے نام پر رکھا گیا ہے۔

دوسری جانب وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ جن پاکستانیوں کے نام پنڈورا پیپرز میں ائے ہیں، ان کے خلاف تحقیقات کی جائیں گی۔

اس پیج کو ابھی مزید اپ ڈیٹ کیا جارہا ہے

Leave A Reply

Your email address will not be published.