Ultimate magazine theme for WordPress.

لقوہ، کیا ہوتا ہے، لقوہ کی وجوہات کیا ہیں؟ لقوہ کا علاج کیسے کیا جاتا ہے؟

49

لقوہ کے نتیجہ میں انسان اپنے چہرے کو کسی بھی قسم کی حرکت دینے کے قابل نہیں رہتا۔ لقوہ کا علاج کیا ہوتا ہے؟ یقینا آپ جاننا چاہتے ہوں گے!

مسکرانے سمیت چہرے کی تمام حرکات بری طرح متاثر ہوتی ہیں، انسان اپنے جذبات و خیالات دوسروں تک منتقل نہیں کر پاتا۔

لقوہ ہونے پر متاثرہ شخص آنکھیں بند کرنے یا کھولنے کے قابل نہیں رہتا، اس میں بہتری آنے میں کئی ہفتے لگ جاتے ہیں۔

عام طور پر چہرے کے ایک طرف لقوہ ہوتا ہے، جس کے نتیجہ میں اس کی حرکت بند ہو کر رہ جاتی ہے۔

لقوہ کی 4 اہم علامات:

  1. لقوہ کے نتیجہ میں چہرے کی جلد کھسک کر آنکھوں، گال اور منہ کے گرد جمع ہو جاتی ہے۔
  2. چہرے کی جلد اکٹھی ہونے کے باعث عضلات اپنا کام کرنے کے قابل نہیں رہتے۔
  3. بعض اوقات ایسا بھی ہوتا ہے کہ متاثرہ شخص چہرے کے پٹھوں میں کھچاﺅ محسوس کرتا ہے۔
  4. چہرے کے پٹھوں میں کھچاﺅ زیادہ ہو تو انسان اپنی پلکیں بند کرنے سے بھی قاصر ہو جاتا ہے۔

لقوہ کے اسباب اور وجوہات:

ماہرین کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ لقوہ کی بیماری ہونے کے کئی ایک اسباب ہوتے ہیں۔

  • یہ بیماری زیادہ تر بالغ افراد کو ہوتی ہے تاہم بعض لوگ پیدائشی طور پر بھی اس میں مبتلا ہوتے ہیں۔
  • اعصاب میں جلن، کان میں کسی بھی قسم کی انفیکشن یا کوئی سوزش بھی لقوہ ہونے کا باعث بن سکتی ہے۔
  • بعض افراد میں نامیاتی طور پر ایسا ہوتا ہے کہ عضلات کی حرکت رک جاتی ہے، جو لقوہ کا باعث بن جاتی ہے۔
  • آدھے چہرے کا مفلوج ہو جانا اس کی سب سے عام وجہ سمجھی جاتی ہے اور ایسا اکثر اچانک ہوتا ہے۔
  • اس بیماری سے عام طور پر چہرے کا ایک حصہ ہی متاثر ہوتا ہے اور اعصاب میں سوجن پیدا ہو جاتی ہے۔
  • اعصاب میں سوجن آ جانے کے نتیجہ میں چہرے کی طرف خون کا بہاﺅ فوری طور پر رک جاتا ہے۔

لقوہ کا علاج:

اگر کسی کو لقوہ ہو جائے تو عام طور پر اس کو مکمل طور پر ٹھیک ہونے میں ایک سال کا عرصہ لگ جاتا ہے۔

  • اس کا علاج زیادہ تر کارٹیسون پر انحصار کرتا ہے اور یہ ڈاکٹر مرض کے چار سے پانچ دن بعد تجویز کرتے ہیں۔
  • ڈاکٹرز کے مطابق لقوہ ہونے پر متاثرہ شخص کو چاہئے کہ وہ اپنی آنکھوں کی سب سے زیادہ حفاظت کرے۔
  • متاثرہ شخص کو کسی ٹھنڈی جگہ سے گرم جگہ یا گرم جگہ سے ٹھنڈی جگہ پر اچانک منتقل نہیں ہونا چاہئے۔
  • لقوہ ہونے پر متاثرہ جگہ پر تیل سے ہلکی ہلکی مالش کی جائے اور اینٹی بائیوٹک ادویات استعمال کی جائیں۔
  • وٹامن بی 12 زیادہ سے زیادہ استعمال کرنا لقوہ سے متاثرہ شخص کے لئے انتہائی مفید ثابت ہوتا ہے۔

Leave A Reply

Your email address will not be published.