Ultimate magazine theme for WordPress.

Nakseer – نکسیر کیا ہے؟ کیوں پھوٹتی ہے ؟ نکسیر کا علاج

324

Nakseer – نکسیر کیا ہے؟ یہ کیوں پھوٹتی ہے ؟ نکسیر آنے کی وجوہات کیا ہوسکتی ہیں اور اس کا علاج کیا ہے؟

یہ ہیں وہ سوالات، جن کا سامنا کسی شخص کو اچانک کرنا پڑسکتا ہے۔

نکسیر عام مشاہدہ کی جانے والی ایسی بیماری ہے، جس میں بظاہر کسی بھی وجہ کے بغیر ناک سے خون بہنے لگتا ہے۔

یہ بیماری عام طور پر 6 سے 10 سال تک کی عمر کے بچوں میں زیادہ دیکھنے کو ملتی ہے۔

اس کے علاوہ 50 سے 85 سال کی عمر کے افراد بھی اس بیماری میں مبتلا ہوسکتے ہیں۔

ناک سے خون بہنے کی اقسام:

Nakseer
Nakseer is called Nose Bleeding in English

ماہرین کے مطابق نکسیر کی کئی ایک اقسام ہیں اور اس کی وجوہات بھی مختلف ہوتی ہیں۔

یہ ناک کے اگلے حصے سے بھی پھوٹتی ہے اور اس کا تعلق ناک کے پچھلے حصے سے بھی ہو سکتا ہے۔

1: ناک کے اگلے حصے سے پھوٹنا

ناک کے درمیان والی وہ جھلی جو کہ نتھنوں کو الگ کرتی ہے، یہ وہاں سے پھوٹتی ہے۔

یہاں پر خون کی بہت ساری رگیں ہوتی ہیں، چہرے پر چوٹ آنے یا ناخن لگ جانے سے بھی یہ پھوٹ جاتی ہے۔

عام طور پر دیکھنے میں آیا ہے کہ ناک کے نچلے حصے سے نکسیر پھوٹتی ہے۔

2: ناک کے پچھلے حصے سے پھوٹنا

یہ ناک کے سب سے پچھلے حصے میں گہرائی سے پھوٹتی ہے، لیکن ایسا بہت کم ہوتا ہے۔

بڑی عمر کے افراد کو چہرے پر چوٹ لگنے یا پھر بلڈ پریشر ہائی ہونے کی وجہ سے ایسا ہو سکتا ہے۔

نکسیر پھوٹنے کے دوران یہ جاننا بہت مشکل ہوتا ہے کہ یہ ناک کے اگلے حصے سے پھوٹی ہے یا کہ پچھلے حصے سے بہہ رہی ہے۔

یہ ناک کے اگلے حصے سے پھوٹے یا پھر پچھلے حصے سے، دونوں ہی صورتوں میں خون فوارے کی طرح خارج ہوتا ہے۔

اگر تو مریض پیٹھ کے بل لیٹا ہوا ہو تو خون اس کے حلق میں جانے کا خطرہ بھی ہوتا ہے۔

ناک کے پچھلے حصے سے پھوٹنے والی نکسیر زیادہ خطرناک ہوتی ہے۔

نکسیر پھوٹنے کی 8 وجوہات: Nakseer Causes

ماہرین کے مطابق نکسیر عام طور پر ناک کے اگلے حصے سے ہی بہتی ہے، اس کے کئی ایک اسباب ہو سکتے ہیں۔

  1. ادویات کا غلط یا پھر حد سے زیادہ استعمال اس کے پھوٹنے کا سبب بن سکتا ہے
  2. انگلی یا ناخن لگنے سے ناک کے اندر زخم ہو سکتا ہے، جو کہ نکسیر پھوٹنے کا باعث بن سکتا ہے۔
  3. موسم کی تبدیلی بھی ناک کے اندرونی حصوں پر اثر انداز ہوتی ہے، خشک سردی میں ناک سوکھ جاتاہے۔
  4. موسم گرما میں اکثر خون کی رگیں پھول جاتی ہیں جو کہ نکسیر پھوٹنے کا سبب بن سکتی ہیں۔
  5. ناک کی داخلی جھلی میں ہونے والا زخم بھی اس کی ایک اہم وجہ ہو سکتا ہے۔
  6. الرجی بھی ناک کے داخلی حصوں کو متاثر کرتی ہے جبکہ سوزش کے باعث بھی نکسیر پھوٹ سکتی ہے۔
  7. ماہرین کے مطابق امراض قلب کی ادویات بھی نکسیر پھوٹنے کا باعث بن سکتی ہے۔
  8. جگر، گردوں اور خون کی مختلف بیماریوں میں مبتلا افراد بھی نکسیر پھوٹنے کے مسائل سے دوچار ہوسکتے ہیں۔

نکسیر کا علاج: Nakseer Treatment

نکسیر اگر بار بار پھوٹنے لگنے تو اس سے بچاﺅ کے لئے ماہرین کی ان ہدایات پر عمل کیا جائے۔

گھر میں ہیومیڈیفائر کا استعمال کرتے ہوئے فضا میں نمی کے تناسب کو درست رکھنے کی کوشش کی جائے۔

ناک میں کسی بھی صورت خارش نہ کریں، اس سے ہر ممکن پرہیز کیا جائے۔

ایسی ادویات کا استعمال کم سے کم کیا جائے جو کہ خون کو پتلا کرنے کا باعث بنتی ہیں، اس سے نکسیر جلد پھوٹ جاتی ہے۔

ایسے افراد جن کو نکسیر کے مسائل ہوں وہ سپرے یا جیل کے استعمال سے ناک کا اندرونی حصہ تر رکھیں۔

یہ بھی پڑھیں:

Leave A Reply

Your email address will not be published.